Monday, April 22, 2024
ہومپاکستانسینیٹ انتخابات ،پرویز رشید نااہل، فیصل واوڈا اہل،یوسف رضا گیلانی کے کاغذات نامزدگی بھی منظور

سینیٹ انتخابات ،پرویز رشید نااہل، فیصل واوڈا اہل،یوسف رضا گیلانی کے کاغذات نامزدگی بھی منظور

اسلام آباد، سینیٹ انتخابات کیلئے مسلم لیگ(ن)کے امیدوار پرویز رشید کے کاغذات نامزدگی مسترد جبکہ وفاقی وزیر فیصل واوڈا اور پی ڈی ایم کے مشترکہ امیدوار یوسف رضا گیلانی کے کاغذات نامزدگی منظور کرلیے گئے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق سینیٹ الیکشن کیلئے امیدواروں کے کاغذات نامزدگی کی جانچ پڑتال کے آخری روزاسلام آباد سمیت چاروں صوبائی دارالحکومتوں میں ریٹرننگ افسران نے امیدواروں کے کاغذات نامزدگی کی جانچ پڑتال کی، امیدواروں کی جانب سے جمع کرائے گئے کوائف کی تصدیق کے لیے ریٹرننگ افسران کو نادرا، اسٹیٹ بینک اور ایف بی آر سمیت تمام متعلقہ اداروں کی مکمل معاونت حاصل رہی۔الیکشن کمیشن کی جانب سے اسلام آباد میں سینیٹ انتخابات کے لئے مقرر ریٹرننگ آفیسر نے سابق وزیر اعظم یوسف رضا گیلانی کے کاغذات نامزدگی پرتحریک انصاف کے اعتراضات پر گزشتہ روز سماعت مکمل کرکے فیصلہ آج تک کے لیے محفوظ کیا تھا۔ریٹرننگ آفیسر نے فریقین کے دلائل سننے کے بعد یوسف رضا گیلانی کے کاغذات نامزدگی پر تحریک انصاف کیاعتراضات مسترد کرتے ہوئے انہیں سینیٹ الیکشن لڑنے کے لئیاہل قرار دے دیا ہے۔ فیصلے میں کہا گیا ہے کہ یوسف رضا گیلانی کی 5 سالہ نااہلی ختم ہوچکی جب کہ ان کے مقدمات عدالتوں میں زیر التوا ہیں، زیرالتوا مقدمات پر کسی کو الیکشن لڑنے سے نہیں روکا جا سکتا۔پی ٹی آئی کے فرید رحمان کی جانب سے موقف اختیار کیا گیا تھا کہ یوسف رضا گیلانی آرٹیکل 62 اور 63 پر پورا نہیں اترتے، وزیر اعظم کے حلف کی خلاف ورزی کرنے پر نااہلی تاحیات ہے، ان کے خلاف نیب میں ریفرنس زیر التوا ہیں ، اس لئے انہیں سینیٹ انتخابات لڑنے کی اجازت نہیں ہونی چاہیے۔تحریک انصاف نے مسلم لیگ (ن)کے پرویز رشید پر اہم قومی راز افشاں کرنے، اداروں کے خلاف بات کرنے، پنجاب ہاوس کے 95 لاکھ روپے کے نادہندہ ہونے اور کاغذات نامزدگی میں جنرل نشست جبکہ بیان حلفی میں ٹیکنوکریٹ کا ذکر ہونے پر کی بنیاد پر اعتراض داخل کیا تھا، ریٹرنگ افسر نے فریقین کے دلائل سننے کے بعد پرویز رشید کے کاغزات نامزدگی مسترد کردیئے۔پرویزرشید نے الیکشن کمیشن کا فیصلہ چیلنج کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ میں تنقید کرتا ہوں اس لیے مجھے ایوان سے باہر رکھنے کی کوشش کی گئی، جو تقریر عمران خان سے برداشت نہیں وہ آواز خاموش کرنا چاہتے ہیں، کاغذات نامزدگی مسترد ہونے کے خلاف اپیل میں جائوں گا۔ریٹرننگ افسر نے سندھ سے سینیٹ کی نشست کے امیدوار فیصل واودا کے کاغذات نامزدگی منظور کرلیے ہیں۔ سینیٹ کی جنرل سیٹ کے امیدوار فیصل واڈا الیکشن کمیشن سندھ پہنچے اور اپنے تائید و تجویز کنندہ کے ہمراہ ریٹرننگ افسر کے دفتر میں گئے تو ان کے خلاف درخواست گزار وکلا بھی اندر جانے لگے مگر الیکشن کمیشن کے عملے اور پولیس نے ان کے ہمراہ موجود غیر متعلقہ افراد کو جانے سے روک دیا اسی پر تلخ کلامی شروع ہوگئی، بحث و مباحثے کے دوران نعرے بازی بھی شروع ہوگئی، اس دوران پولیس کی اضافی نفری بلاکر الیکشن کمیشن کے گیٹ بند کردیے گئے اور غیر متعلقہ افراد کو باہر نکال دیا، صورتحال کچھ دیر میں معمول پر آگئی۔دوسری جانب پنجاب سے تحریک انصاف کی نیلم ارشاد کے خواتین نشست پر کاغذات نامزدگی مسترد ہوگئے ہیں جب کہ فرحت شہزادی نے اپنے کاغزات نامزدگی واپس لے لیے ہیں۔سینٹ انتخابات کیلئے پنجاب سے 11 نشستوں کیلئے (ن)لیگ کے 5، پی ٹی آئی کے 8، پیپلز پارٹی اور(ق)لیگ کے ایک، ایک امیدوار کے کاغذات نامزدگی منظور ہو چکے ہیں۔مسلم لیگ ق کے کامل علی آغا اور پیپلز پارٹی کے عظیم الحق منہاس کے کاغذات نامزدگی بھی منظور کئے ہو گئے۔ اس کے علاوہ پی ٹی آئی کے جمشید اقبال چیمہ، ڈاکٹر زرقا سہروردی، محمد خان مدنی، عمر سرفراز چیمہ، بیرسٹر علی ظفر، سیف اللہ خان نیازی، اعجاز چودھری اور ظہیر عباس کھوکر نے بھی کاغذات نامزدگی منظوری کا مرحلہ طے کر لیا ہے۔الیکشن کمیشن کی جانب سے ن لیگ کے زاہد حامد، اعظم نذیر تارڑ، سیف الملوک کھوکھر، عرفان صدیقی اور سائرہ افضل تارڑ کے کاغذات نامزدگی بھی منظور ہو چکے ہیں، پنجاب کے 29 میں سے 5 امیدوار سینیٹ سے آئوٹ ہوگئے ۔جانچ پڑتال کے بعد پنجاب سے 21 امیدواروں کے کاغذات نامزدگی منظور اور 2 کے مسترد ہوگئے، پرویز رشید کے علاوہ خواتین کی نشست پر نیلم ارشاد کے کاغذات مسترد ہوئے،نیلم ارشاد نے جنرل نشست سے کاغذات نامزدگی واپس لے لئے۔لیگی امیدوار سعود مجید کو گزشتہ روز پارٹی ٹکٹ جمع کرانے کی ہدایت کی گئی تھی لیکن ن لیگ کے امیدوار سعود مجید اور پی ٹی آئی کی امیدوار روبینہ اختر اسکروٹنی کمیٹی کے سامنے پیش نہ ہوئیں۔ سینیٹ کے لیگی امیدوار مشاہد اللہ خان گزشتہ رات وفات پا گئے تھے۔ الیکشن کمیشن آف پاکستان نے بلوچستان سے سینیٹ الیکشن کیلیے پانچ امیدواروں کے کاغذات نامزدگی منظور کرلیے۔ بلوچستان سے جنرل نشستوں پر پاکستان تحریک انصاف کے ظہور آغاز کے کاغذات نامزدگی منظور کیے گئے ہیں جبکہ عوامی نیشنل پارٹی کے ارباب عمر فاروق اور بلوچستان عوامی پارٹی کے عمر احمد زئی کی کاغذات نامزدگی بھی منظور ہوگئے۔الیکشن کمیشن کا کہنا ہے کہ اقلیت اور خواتین کی نشست کیلئے عوامی نیشنل پارٹی کی بینش سکبدر جبکہ پی ڈی ایم کی امیدوار عاطفہ صادق کو بھی کلین چٹ مل گئی۔الیکشن کمیشن کی جانب سے گزشتہ روز ٹیکنوکریٹ نشست کے امیدوار احمد نواز کے کاغذات نامزدگی مسترد کردئیے تھے۔دوسری طرف الیکشن کمیشن نے سینیٹ انتخابات شفاف بنانے کے لیے امیدواروں سے بیان حلفی لینے کا فیصلہ کیا ہے ۔سینیٹ انتخابات میں امیدواروں سے بیان حلفی پہلی دفعہ لیا جارہا ہے۔ امیدوار انتخاب میں کرپٹ پریکٹس، آئین اورقانون کی خلاف ورزی نہ کرنے کا بیان حلفی جمع کرائے گا۔الیکشن کمیشن کی طرف سے بنائے گئے بیان حلفی کا ڈرافٹ سامنے آگیا جس میں سینیٹ امیدوار ٹکٹ پر پیسے نہ دینے کی یقین دہانی کرائے گا۔امیدوار ووٹ کی خریدو فروخت کے لیے کسی بھی طرح پیسے کا استعمال نہ کرنے کی تحریری یقین دہانی کرائے گا اور اس نے اگر پارٹی ٹکٹ سے متعلق رقم دی ہے تو الیکشن کمیشن کو آگاہ کریگا۔امیدوار الیکشن کمیشن کو کسی بھی طرح کے اکانٹ کی تحقیقات کی اجازت دیگا اور الیکشن کمیشن کو تحریری طور پر ضابطہ اخلاق پر عملدرآمد کی یقین دہانی کرائے گا۔ امیدوار اوتھ کمشنر سے تصدیق شدہ بیان حلفی جمع کرائے گا جس پر امیدوار کے دستخط اور انگوٹھے کے نشان اور شناختی کارڈ نمبر درج ہوگا۔