Monday, April 22, 2024
ہومپاکستانپاکستان پر سفری پابندیاں،وفاقی وزیر اسد عمر نے برطانوی فیصلے پر سوال اٹھا دیے

پاکستان پر سفری پابندیاں،وفاقی وزیر اسد عمر نے برطانوی فیصلے پر سوال اٹھا دیے

اسلام آباد،وفاقی وزیر منصوبہ بندی اسد عمر نے برطانیہ کی جانب سے پاکستان پر عائد سفری پابندیوں پر سوال اٹھاتے ہوئے کہا کہ برطانوی حکومت نے ریڈ لسٹ میں شامل ممالک کا چنا سائنسی بنیاد پر کیا یا اس کی وجہ خارجہ پالیسی ہے؟۔سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹویٹر پر وفاقی وزیر منصوبہ بندی اسد عمر نے برطانوی رکن پارلیمنٹ ناز شاہ کے خط کی کاپی کو ٹویٹ کیا ہے، جس میں ناز شاہ نے بھارت، امریکہ کی نسبت بہتر صورتحال کے باوجود پاکستان کو ریڈ لسٹ میں شامل کرنے کا معاملہ اٹھایا ہے۔اسد عمر نے لکھا ہے کہ ہر ملک کو اپنے شہریوں کی صحت کی حفاظت سے متعلق فیصلہ کرنے کا حق ہے، تاہم برطانوی حکومت کی جانب سے کورونا صورتحال کو جواز بنا کر پاکستان سمیت چند دیگر ممالک کو ریڈ لسٹ میں شامل کرنے کے عمل نے جائز سوالات اٹھا دیئے ہیں۔وفاقی وزیر نے اپنی ٹویٹ میں مزید لکھتے ہوئے کہا کہ برطانوی حکومت کی ریڈ لسٹ میں شامل کرنے کے لئے پاکستان و چند دیگر ممالک کا چنا سائنسی بنیاد پر تھا یا اس کی وجہ خارجہ پالیسی تھی۔دوسری جانب برطانوی رکن پارلیمنٹ ناز شاہ نے برطانیہ میں کورونا کے حوالے سے پاکستان کو ریڈ لسٹ میں شامل کرنے کی مخالفت کر دی۔ انھوں نے اس سلسلے میں برطانوی فارن سیکرٹری کو خط بھی لکھا ہے۔پاکستان کو ریڈ لسٹ میں شامل کرنے کی مخالفت کرتے ہوئے برطانوی رکن پارلیمنٹ ناز شاہ نے برطانوی فارن سیکرٹری کو لکھے گئے خط میں کہا ہے کہ پاکستان کو ریڈ لسٹ میں شامل کرنے کا فیصلہ سیاسی ہے، بھارت سمیت کئی ممالک میں کورونا کی شرح پاکستان سے زیادہ ہے، لیکن انھیں ریڈ لسٹ میں شامل نہیں کیا گیا۔یاد رہے کورونا وائرس کے بڑھتے ہوئے کیسز کے پیش نظر برطانیہ نے پاکستان کو ریڈ لسٹ میں شامل کیا ہے۔ پاکستان میں موجود برطانوی شہری اور ریزیڈنسی ویزا کے حامل افراد ہی واپس برطانیہ جا سکیں گے، پاکستانیوں کو وزٹ ویزہ ایشو نہیں ہوگا۔