Thursday, April 18, 2024
ہومکھیلآفریدی کو کپتانی سے ہٹانا:کیابورڈ کی بتائی گئی وجوہات درست ہیں؟

آفریدی کو کپتانی سے ہٹانا:کیابورڈ کی بتائی گئی وجوہات درست ہیں؟

اسلام آباد ( اویس لطیف ) پاکستان کرکٹ بورڈ(پی سی بی)کی جانب سے 5 اپریل کو نیوزی لینڈ کے خلاف آئندہ پانچ میچوں کی ٹی ٹونٹی سیریز کے لیے سکواڈ کا اعلان متوقع ہے۔ سلیکشن کمیٹی کے ارکان فی الحال کاکول فٹنس کیمپ میں کھلاڑیوں کے فٹنس لیول کا جائزہ لے رہے ہیں۔ وہ پی سی بی کے چیئرمین محسن نقوی کو تفصیلی رپورٹ فراہم کریں گے، جو کھلاڑیوں سے ملاقات کے لیے آج کاکول جائیں گے۔نقوی نے سلیکٹرز کو ہدایت کی ہے کہ فٹنس پر کوئی سمجھوتہ نہیں کیا جائے گا۔

سکواڈ کے لیے ممکنہ کھلاڑیوں کے حوالے سے سلیکٹرز کے درمیان بات چیت جاری ہے۔ کپتان بابر اعظم سے مشاورت کے بعد سفارشات چیئرمین کرکٹ بورڈ کو منظوری کے لیے پیش کی جائیں گی۔ ذرائع کے مطابق سلیکٹرز امریکہ اور ویسٹ انڈیز میں ہونے والے ٹی ٹونٹی ورلڈ کپ 2024 کی تیاری میں انجریز کے خطرے کو کم کرنے کے لیے روٹیشن پالیسی کے نفاذ پر غور کر رہے ہیں۔خاص طور پر شاہین آفریدی اور نسیم شاہ کو نیوزی لینڈ کے خلاف منتخب میچوں میں کھیلنے کے لیے مختص کیا گیا ہے تاکہ وہ اپنے کام کا بوجھ سنبھال سکیں اور T20 ورلڈ کپ سے قبل چوٹ کے خطرات کو کم کر سکیں۔

شاہین اور نسیم پر کام کے بوجھ کے حوالے سے بابر اعظم سے تفصیلی بات چیت کا منصوبہ ہے۔ فاسٹ باولر محمد عامر اور آل راونڈر عماد وسیم، دونوں حال ہی میں بین الاقوامی ریٹائرمنٹ سے واپس آئے ہیں، کو بین الاقوامی کرکٹ کے لیے ضروری میچ فٹنس حاصل کرنے کے لیے کھیلنے کا کافی وقت ملے گا۔فخر زمان اور حارث روف اب بھی پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) کے نویں ایڈیشن کے دوران لگنے والی انجری سے صحت یاب ہیں۔ عثمان خان کو اسکواڈ میں شامل کیے جانے کا امکان ہے اور توقع ہے کہ وہ کیویز کے خلاف پلیئنگ الیون میں چوتھے نمبر پر بیٹنگ کریں گے۔ سلیکٹرز کی جانب سے ہوم سیریز کے لیے تقریبا 17 سے 18 کھلاڑیوں کے نام متوقع ہیں

، ٹی ٹونٹی ورلڈ کپ کے لیے حتمی 15 رکنی اسکواڈ کا انتخاب اس پول سے کیا جائے گا۔ قومی ٹیم کا فٹنس کیمپ 8 اپریل کو اختتام پذیر ہو گا۔ دریں اثنا نیوزی لینڈ کی ٹیم 18 اپریل سے شروع ہونے والی پانچ ٹی ٹونٹی میچوں کی سیریز کے لیے 14 اپریل کو پاکستان پہنچے گی جس کے تین میچ پنڈی اور بقیہ دو لاہور میں شیڈول ہیں۔ پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی)کی جانب سے 5 اپریل کو نیوزی لینڈ کے خلاف آئندہ پانچ میچوں کی ٹی ٹونٹی سیریز کے لیے سکواڈ کا اعلان متوقع ہے۔ سلیکشن کمیٹی کے ارکان فی الحال کاکول فٹنس کیمپ میں کھلاڑیوں کے فٹنس لیول کا جائزہ لے رہے ہیں۔ وہ پی سی بی کے چیئرمین محسن نقوی کو تفصیلی رپورٹ فراہم کریں گے، جو کھلاڑیوں سے ملاقات کے لیے آج کاکول جائیں گے۔نقوی نے سلیکٹرز کو ہدایت کی ہے کہ فٹنس پر کوئی سمجھوتہ نہیں کیا جائے گا۔ سکواڈ کے لیے ممکنہ کھلاڑیوں کے حوالے سے سلیکٹرز کے درمیان بات چیت جاری ہے۔

کپتان بابر اعظم سے مشاورت کے بعد سفارشات چیئرمین کرکٹ بورڈ کو منظوری کے لیے پیش کی جائیں گی۔ ذرائع کے مطابق سلیکٹرز امریکہ اور ویسٹ انڈیز میں ہونے والے ٹی ٹونٹی ورلڈ کپ 2024 کی تیاری میں انجریز کے خطرے کو کم کرنے کے لیے روٹیشن پالیسی کے نفاذ پر غور کر رہے ہیں۔خاص طور پر شاہین آفریدی اور نسیم شاہ کو نیوزی لینڈ کے خلاف منتخب میچوں میں کھیلنے کے لیے مختص کیا گیا ہے تاکہ وہ اپنے کام کا بوجھ سنبھال سکیں اور T20 ورلڈ کپ سے قبل چوٹ کے خطرات کو کم کر سکیں۔

شاہین اور نسیم پر کام کے بوجھ کے حوالے سے بابر اعظم سے تفصیلی بات چیت کا منصوبہ ہے۔ فاسٹ باولر محمد عامر اور آل راونڈر عماد وسیم، دونوں حال ہی میں بین الاقوامی ریٹائرمنٹ سے واپس آئے ہیں، کو بین الاقوامی کرکٹ کے لیے ضروری میچ فٹنس حاصل کرنے کے لیے کھیلنے کا کافی وقت ملے گا۔فخر زمان اور حارث روف اب بھی پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل)کے نویں ایڈیشن کے دوران لگنے والی انجری سے صحت یاب ہیں۔ عثمان خان کو اسکواڈ میں شامل کیے جانے کا امکان ہے اور توقع ہے کہ وہ کیویز کے خلاف پلیئنگ الیون میں چوتھے نمبر پر بیٹنگ کریں گے۔

سلیکٹرز کی جانب سے ہوم سیریز کے لیے تقریبا 17 سے 18 کھلاڑیوں کے نام متوقع ہیں، ٹی ٹونٹی ورلڈ کپ کے لیے حتمی 15 رکنی اسکواڈ کا انتخاب اس پول سے کیا جائے گا۔ قومی ٹیم کا فٹنس کیمپ 8 اپریل کو اختتام پذیر ہو گا۔ دریں اثنا نیوزی لینڈ کی ٹیم 18 اپریل سے شروع ہونے والی پانچ ٹی ٹونٹی میچوں کی سیریز کے لیے 14 اپریل کو پاکستان پہنچے گی جس کے تین میچ پنڈی اور بقیہ دو لاہور میں شیڈول ہیں۔