88

پمزاسپتال کی نجکاری کے خلاف ڈاکٹرز اور پیرا میڈیکل اسٹاف کامظاہرہ

اسلام آباد ، چیئرمین گرینڈ ہیلتھ الائنس ڈاکٹر اسفند یارنے حکومت سے پمز اسپتال کی نجکاری کا آرڈیننس واپس لینے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ پمز ہسپتال کی نجکاری سے غریب عوام سے علاج کا حق چھینا جا رہا ہے، آرڈیننس کے خلاف احتجاج کا دائرہ کار مزید وسیع کریں گے، جب تک آرڈیننس واپس نہیں ہوتا ،صرف ایمرجنسی اور آئسولیشن وارڈ میں کام کریں گے۔وہ پیر کو پمز ہسپتال کے ڈاکٹرز اور پیرا میڈیکل اسٹاف کی طرف سے اسپتال کی نجکاری کیخلاف کئے گئے احتجاجی مظاہرے سے خطاب کر رہے تھے۔

مظاہرین نے ایم ٹی آئی آرڈیننس کیخلاف نعرے بازی کی۔ مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے چیئرمین گرینڈ ہیلتھ الائنس ڈاکٹر اسفند یار کہا کہ خیبرپختونواہ میں ناکام ہونے کے باوجود ایم ٹی آئی اب اسلام آباد میں لاگو کردیا گیا ہے ، پمز ہسپتال کی نجکاری سے غریب عوام سے علاج کا حق چھینا جا رہا ہے، کارپوریٹ سیٹ اپ آنے سے غریبوں کو نقصان ہوگا، ملازمین کی نوکریاں ختم ہونگی اور غریب آدمی کو علاج کیلئے رقم ادا کرنا ہوگی، ایکسرے سی ٹی اسکین سمیت دیگر ٹیسٹوں کی فیس وصول کی جائے گی۔ احتجاجی مظاہرین نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ پمز ہسپتال کی نجکاری کے بجائے انتظام بہتر کیا جائے اور ایم ٹی ائی آرڈیننس واپس لیا جائے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

رائے کا اظہار کریں