27

قائمہ کمیٹی برائے صحت،ملک میں 17 ہزار سے زائد نرسز غیر رجسٹرڈ ہونے کا انکشاف

اسلام آباد: ملک میں 17 ہزار سے زائد نرسوں کے غیر رجسٹرڈ ہونے کا انکشاف ہوا ہے۔

تفصیلات کے مطابق پی این سی حکام کا کہنا ہے کہ ملک میں 11 ہزار نرسیں ڈگری ہولڈرز دیگر ڈپلومہ ہولڈرز ہیں، جب کہ سترہ ہزار سے زائد نرسیں غیر رجسٹرڈ ہیں۔

قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے صحت کے اجلاس میں پی این سی حکام نے بتایا کہ نرسنگ کالجز کی انسپکشن کا مکینزم موجود ہے، جس کے تحت قانون شکن نرسنگ کالجز کے خلاف قانونی کارروائی ہوتی ہے، ایچ ای سی نے 2018 میں نرسنگ ڈپلومہ روکنے کا حکم دیا تھا۔

پی این سی حکام کے مطابق ملک میں نرسنگ ڈگری کلاسز والے 339 اسکول ہیں، ان میں 40 فی صد سرکاری، اور 60 فی صد نجی ہیں۔ قائمہ کمیٹی نے نجی نرسنگ اسکولوں کے معیار پر تشویش کا اظہار کیا۔

وزارت صحت حکام نے بتایا کہ ملک کو 9 لاکھ نرسز کی کمی کا سامنا ہے، نرسوں کی تعداد ضرورت کے مطابق نہیں ہے، نرسز زیادہ آمدن کے لیے چھٹی لے کر بیرون ملک چلے جاتے ہیں۔

حکام نے مزید بتایا کہ دنیا پاکستان سے نرسز فراہمی کی درخواست کر رہی ہے، انھیں ڈاکٹرز سے زیادہ پیرامیڈیکس، اور نرسز کی ضرورت ہے، ہم انٹرنیشنل نرسز ایکسچینج پروگرام لانے کی کوشش کر رہے ہیں۔

کیٹاگری میں : صحت

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

رائے کا اظہار کریں