cpec 18

چینی انجینئرز پاکستان میں سی پیک کی تعمیر میں دن رات مصروف

اسلام آ باد(آئی پی ایس)چین کے قومی دن کے حوالے سے سات روزہ تعطیلات کے با وجود پاکستان میں سی پیک کے تحت سکی کناری ہائیڈرو پاور سٹیشن پر تقریبا گیارہ سو چینی انجینئر بدستور دن رات کام کر رہے ہیں۔ چانگ روئی تونگ یونیورسٹی سے فراغت کے بعد چائنا گہ جو بائی گروپ کے تحت پاکستانی کمپنی میں صرف چار سالوں میں اس منصوبے کے لیے ریڑھ کی ہڈی بن چکا ہے ، جس سے مشکلات پر قابو پانے میں کامیابی ملی ہے۔ایک رپورٹ کے مطا بق سکی کناری ہائیڈرو پاور سٹیشن کا بیشتر کام مکمل کیا جا چکا ہے ، اور یہ منصوبہ تعمیراتی دور میں داخل ہو چکا ہے۔ ہائیڈرو پاور سٹیشن کی تکمیل کے بعد پاکستان کو ہر سال 3.2 بلین کلو واٹ فی گھنٹہ شفاف بجلی میسر آئے گی ، جو پاکستان میں بجلی کی طلب کو نمایاں حد تک پورا کرے گا۔ دوسری جانب یہ منصوبہ ایک بڑی تعداد میں ہنر مند صلاحیتوں کو پروان چڑھاسکتا ہے ، جو پاکستان میں قومی توانائی ڈھانچے کی ترتیب، طلب اور رسد کے فرق کو کم کرنے ، اور بنیادی ڈھانچے کی تعمیر کو فروغ دینے میں مثبت اثرات مرتب کرے گا ۔ یہ منصوبہ ماحولیاتی تحفظ ، سبز اور پائیدار ترقی کا راستہ ہے جو پاکستان کی مدد کرے گا۔ عوامی جمہوریہ چین کی 72 ویں سالگرہ کے موقع پر چانگ روئی تونگ نے ریڈیو کے ذریعے مادر وطن کے لیے نیک تمناوں کا اظہار کرتے ہوئے یہ امید ظاہر کی کہ چین کا مستقبل تابناک ہو گا اور ترقی و خوشحالی کا سفر جاری و ساری رہے گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

رائے کا اظہار کریں