30

ملک بھر کے مزدوروں کو سماجی تحفظ فراہم کرنا حکومت کی اولین ترجیح ہونی چاہیے، چوہدری محمد یسین

سماجی تحفظ کے اداروں کا دائرہ کار غیررسمی شعبے کے مزدوروں تک بڑھایا جائے، احمد علی شیرازی
اسلام آباد ،پاکستان ورکرز فیڈریشن اور سی ڈی اے مزدور یونین کے زیر اہتمام سماجی تحفظ کے اداروں اور ان کی موجودہ صورتحال کے حوالے سے سیمینار مرکزی یونین آفس جی سیون میں منعقد ہوا جس میں پاکستان ورکرز فیڈریشن کے سیکرٹری جنرل اور قائد مزدور یونین چوہدری محمد یسین،مزدور یونین کے سپریم ہیڈ صوفی محمود علی،اوجی ڈی سی ایل یونین کے سید اعجاز بخاری،سی ڈی اے مزدور یونین کے چیف میڈیا کوآرڈینٹر ملک کمال اور ترجمان سی ڈی اے مزدور یونین و پاکستان ورکرز فیڈریشن کے ٹرینراحمد علی شیرازی سمیت سی ڈی اے میں کام کرنے والے مختلف ڈائریکٹوریٹس کے نمائندوں نے شرکت کی،پاکستان ورکرز فیڈریشن کے سیکرٹری جنرل چوہدری محمد یسین نے سیمینارکے شرکا سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ صنعتی مزدوروں کی سماجی تحفظ کے اداروں میں رجسٹریشن نہ ہونے کے برابر ہے،لیبر قوانین پر عمل درآمد نہ ہونے کی وجہ سے مزدوروں کی بہت بڑی تعداد سماجی تحفظ سے ملنے والی سہولیات و مراعات سے محروم ہیں،سماجی تحفظ کے اداروں میں وسائل کا نہ ہونا اور عدم دلچسپی کی وجہ سے مزدور مشکلات کا شکار ہیں،سماجی تحفظ کا دائرہ کار صرف رسمی شعبے تک محدود ہے جبکہ غیر رسمی شعبے کے مزدور وں پر کوئی لیبر قوانین لاگو نہیں ہوتا اس موقع پر انھوں نے مزدوروں کے متعلقہ اداروں اوراسلام آباد انتظامیہ سے مطالبہ کیا کہ صنعتی مزدوروں کی سماجی تحفظ کے اداروں،ای اوبی آئی،سوشل سیکورٹی میں رجسٹریشن کو یقینی بنا کر رجسٹریشن کارڈ جاری کیے جائیں اور قانون سازی کے ذریعے غیر رسمی شعبے کے مزدوروں پر لیبر قوانین کا اطلاق کیا جائے اس حوالے سے پاکستان نے بطور ممبر ممالک عالمی ادارہ محنت (ILO) کے متعدد کنونشنز کی توثیق کی ہوئی ہے ضرورت اس بات کی ہے کہ لیبر قوانین میں بہتری کے ساتھ ساتھ عمل درآمد کو یقینی بنایا جائے، ترجمان سی ڈی اے مزدور یونین و پاکستان ورکرز فیڈریشن کے ٹرینراحمد علی شیرازی نے سیمینار کے شرکا کو بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ سوشل سیکورٹی کے قوانین پر عمل درآمد کروانے سمیت سوشل سیکورٹی کے قانون کا دائرہ کار غیر رسمی شعبوں تک بڑھاکر ورکرکی ذاتی حیثیت سے رجسٹریشن کو یقینی بنانے کی ضرورت ہے،انھوں نے ٹریڈ یونین کی اہمیت و افادیت کے حوالے سے بطور ٹریڈ یونین کے کارکن حقوق و فرائض اور ذمہ داریوں سے بھی آگاہ کیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

رائے کا اظہار کریں