syed mehdi naqvi 21

اٹک کینٹ وارڈ نمبر 1 سے اعصاب شکن مقابلے کے بعد پی ٹی آئی بخاری گروپ کے سید مہدی نقوی نے میدان مار لیا

اٹک(آئی پی ایس)اٹک کینٹ وارڈ نمبر 1 سے اعصاب شکن مقابلے کے بعد پی ٹی آئی بخاری گروپ کے سید مہدی نقوی نے میدان مار لیا،لگاتار 30 سال سے جیتنے والے مظبوط امیدوار ملک شاہنواز کو ناقابل یقین شکست،اٹک کنٹونمنٹ بورڈ وارڈ نمبر 1 کے الیکشن میں سنسنی خیز مقابلے کے بعد پی ٹی آئی کے امیدوار سید مہدی نقوی کو کامیابی ملی۔ تفصیلات کے مطابق اٹک کینٹ وارڈ نمبر 1 کے حلقے میں شروع سے ہی کانٹے دار سخت مقابلے کی توقع کی جارہی تھی جس میں ایک طرف 30 سال سے لگاتار جیتتے آئے آزاد امیدوار ملک شاہنواز جنہیں اٹک کے مضبوطدھڑوں کی حمایت حاصل تھی اور ان کے مدمقابل زندگی کا پہلا الیکشن لڑنے والے پی ٹی آئی کے ٹکٹ پر سید یاورعباس بخاری کے حمایت یافتہ امیدوار سید مہدی نقوی تھے۔ دونوں جانب سے بھرپور الیکشن کمپین کی گئی۔12 ستمبر کے دن پولنگ کے اختتام پہ ریٹرننگ افسر کی جانب سے سید مہدی نقوی کو کامیاب قرار دیا گیا جس کے بعد جلوس کی صورت میں سید مہدی نقوی اپنے ساتھیوں سمیت اپنے الیکشن آفس چلے گئے لیکن آدھے گھنٹے بعد ہی ڈرامائی انداز میں آزاد امیدوار ملک شاہنواز کو 4 ووٹوں سے کامیاب قرار دے دیا گیا۔ جس پہ حلقے کے تمام لوگ حیرت زدہ رہ گئے۔اسی رات سید مہدی نقوی اپنے ووٹران و سپورٹران کے ہمراہ آر او آفس پہنچے اور دوبارہ گنتی کی درخواست دی جسے مختلف حیلے بہانوں سے ٹالنے کی کوشش کی گئی تاہم رات گئے درخواست منظور کرکے 17 ستمبر کو ووٹوں کو دوبارہ گنتی کا وقت دے دیا۔اس تمام عرصہ کے دوران پی ٹی آئی کارکنان آر او آفس میں سیل بند کمرے کی نگرانی کرتے رہے تاکہ کوئی گڑ بڑ نہ کی جائے اور مسلسل چار دن کنٹونمنٹ بورڈ آفس کے سامنے دھرنے پہ موجود رہے۔17 ستمبر دن 11 بجے جب دوبارہ گنتی شروع کی گئی تو اس موقع پر نازک صورتحال کے پیش نظر سیکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے اور پولیس کی بھاری نفری تعینات کی گئی۔ ملک شاہنواز کی جانب سے مختلف حیلے بہانے استعمال کرکے ری کانٹنگ روکنے کی کوشش کی گئی جس میں انہیں ناکامی ہوئی اور آخرکار اعصاب شکن انتظار کے بعد ری کانٹنگ میں سید مہدی نقوی 20 ووٹوں سے کامیاب قرار پائے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

رائے کا اظہار کریں